احمدفرازکے دس منتخب اشعار


شاعر: احمد فراز
انتخاب از: سیماب شیخ
تو    خدا ہے    نہ    مرا عشق فرشتوں جیسا
دونوں انساں ہیں توکیوں اتنے حجابوں میں ملیں 
            ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نہ جانے کیوں مری آنکھیں برسنے لگتی ہیں
جو سچ کہوں تو کچھ ایسا اداس ہوں بھی نہیں
            ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
پھول کھلتے ہیں تو ہم سوچتے ہیں 
تیرے آنے کے زمانے آئے
          ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اُس کی آنکھوں کو کبھی غور سے دیکھا ہے فراز
سونے  والوں کی طرح جاگنے والوں جیسی
             ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
فرازؔ ظلم ہے    اتنی    خود اعتمادی    بھی
کہ رات بھی تھی اندھیری چراغ بھی نہ لیا
            ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تیرے لہجے کی تھکن میں ترا دل شامل ہے
ایسا لگتا ہے جدائی کی گھڑی آ گئی دوست
           
            ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کس کس کو بتائیں گے جدائی کا سبب ہم
تومجھ سے خفا ہے تو زمانے کے لیے آ
           
          ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
سناہے دن کو اسے تتلیاں ستاتی    ہیں 
سنا ہے رات کو جُگنوٹھہر کے دیکھتے ہیں
           
            ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
عشق میں دنیا گنوائی ہے نہ جاں دی ہے فراز
پھر بھی ہم اہلِ محبت کی مثالوں میں رہے
           
             ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
نئے  سفر میں ابھی    ایک نقص باقی ہے
جو شخص ساتھ نہیں اس کا عکس باقی ہے
You might also like

Leave A Reply

Leave Your Comments for this Post