کرونا وائرس : ذوالفقاراحسن

 

گھروں میں مقفل ہو جانا پڑے گا
کرونا کو یونہی بھگانا پڑے گا
ہمیں اِس سے لڑنا ہے ڈرنا نہیں ہے
یہ اوروں کو احسن بتانا پڑے گا

ستم جو بھی ہیں وہ سہیں فاصلے پر
ہے جو کچھ بھی کہنا، کہیں فاصلے پر
دلوں سے مٹائیں مگر فاصلوں کو
عزیزوں سے لیکن رہیں فاصلے پر

کرونا تباہی کے دھانے پہ لایا
بڑا خوف اب کے زمانے پہ لایا
بڑا زعم تھا جن کو طاقت پہ اپنی
عقل اُن کی ایسی ٹھکانے پہ لایا

کہ رو رو کے فریاد کیجے خدارا
کہ تاریخ کو یاد کیجے خدارا
کہیں بھوک سے مر نہ جائیں یہ مفلس
غریبوں کی امداد کیجئے خدارا

پاکیزہ پوتیر و طاہر ہوئے ہیں
وباؤں سے بچنے کے ماہر ہوئے ہیں
کہ مندر، کلیسا و مسجد بھی بند ہے
قیامت کے آثار ظاہر ہوئے ہیں

You might also like

Leave A Reply

Leave Your Comments for this Post