تم نے کہا تھا : شازیہ مفتی

شازیہ مفتی
شازیہ مفتی
تم نے کہا تھا لوٹ آؤں گا
کچھ ہی دن کی بات ہے جاناں
میں نے مانا سچ ہی ہوگا
کچھ دن کی بات ہی ہوگی
دھانی جوڑا روپہلی سنہری گوٹے والا
جھمکے، پائل ،بندیا ، ست رنگی کنگن کی جوڑی
کاجل ،لالی اور تمہاری پسند کی خشبو
سب کچھ الماری میں رکھ چھوڑا
پھر جیسے وقت نے دوڑ لگادی
تیز ،تیز اور تیز
آج اک مدت بعد۔۔۔وہ برسوں سے بند الماری کھولی
دیکھا پھیکے پڑ گئے سب رنگ
دھانی جوڑا سرمئی ہو گیا
خشبو اُڑگئی ۔۔۔ اک باسی پن تھا اور سیلن تھی
پھر بہتے پانی میں اِک اِک کر کے پھینک آئی
کچھ ڈوب گیا ۔۔۔کچھ دور تلک بہتا ہی گیا
کوئی وعدہ تھا ۔۔۔کوئی جاگتی آ نکھوں کا سپنا
کوئی تارے توڑکے لانے کا دعویٰ
بس سچ نہیں تھا
اب بیٹھی یہ سوچتی ہوں
کیوں میں نے سچ مانا۔۔۔ جب تم نے کہا تھا
کچھ ہی دن کی بات ہے جاناں۔

~ … ~ Tum ney kaha tha ~ … ~

Tum ney kha tha lout aaon ga
Kuch hi din ki baat hey jana
Main ney mana sach hi hoga
Kuch hi din ki baat hi hogi
Dhanni Jora Ropehli Sunehri Gotey Wala
Jhumkey , Payal , Bindiya , Sat Rangi Kangan ki Jori
Kajal, Lali awr Tumhari Pasand ki Khushboo
Sab kuch Almari Main Rakh Chora
PHir Jaisey Waqt Ney Dour Laga Di
Taiz , Taiz or Taiz
Aaj ik Mudat Baad …Woh Barson se band Almari kholi
Daikha Pheekey per Gaey Sab Rang
Dhaani JOra Surmai Hogaya
Khushboo Ur Gai….Ik Basi Pan Tha Or Seelan Thi
Phir Behtey Pani Main Ik Ik Ker ky Phaink Aai
Kuch Doob Gaya ….. KUch Door Talak Behta hi Gaya
Koi Wada tha …. Koi Jagti Aankhon Ka Sapna
Koi Tarey tor ky laney ka Dawa
Bas Sach Nahi Tha
Ab Baithi ye Sochti Hoon
Kion main ney Sach Mana ….. Jab Tum Ney Kaha tha
Kuch hi Din ki Baat Hey janna.

Shazia Mufti.

You might also like

Leave A Reply

Leave Your Comments for this Post