حمایت علی شاعربھی رخصت ہوگئے۔

صرف دیوارکورستے کی رکاوٹ نہ سمجھ

پسِ   دیوار  کہیں  سایہ ٗ دیوار   بھی      ہے

تو  نہیں جانتا  غالب کے طرف  داروں  کو

جوسُخن فہم ہے غالب کا طرف داربھی ہے

                      ( حمایت علی شاعر)

 

You might also like

Leave A Reply

Leave Your Comments for this Post