غزل : ناصر علی سید

شبِ فراق خیالِ وصال کم کم ہے یہ اور بات طبیعت بحال کم کم ہے جو ایک رسم  چلی تھی مزاج پُرسی کی…

غزل : خالد شریف

رخصت ہوا  تو  بات  مری  مان  کر  گیا جو اس کے پاس تھا وہ مجھے دان کر گیا بچھڑا کچھ اس ادا سے کہ رت ہی بدل گئی اک…