پیش و پس : ڈاکٹرستیہ پال آنند

مَیں کہ ناخوب تھا
خوب سے خوب تَر کی طرف
جب چلا، تو کُھلا

پیش تھے میرے اپنے قدم
پر سفر پس کی جانب اُلٹ پیچ میں
منقلب تھا کہ پنجے مرے
ایڑیوں کی جگہ بست تھے

اور پرانی، دریدہ پھٹی ایڑیاں
پائوں کی راہبر، سامنے منسلک تھیں گھسٹتی ہوئیں!

خوب سے خوب تر کیسے بنتا کہ مَیں
کل کا یاجوج ماجوج
انساں بنا
تو بھی وحشی کا وحشی رہا!

You might also like

Leave A Reply

Leave Your Comments for this Post